Birthday Celebration..

Our family don’t celebrate birthdays, we usually go out have dinner on birthdays.. and that was the only plan for my 29th birthday [8th December] too.. but thanks to family & friends, had to cut 3 cakes in whole day, had dinner with friends & family.. AND highlight of the day.. celebrated birthday with fellows at Fatimid Foundation 🙂

Nothing can be greater than sharing happiness with others, we all should celebrate our birthdays, any good news with less fortunate.. and even if there is no reason, no birthday we shouldn’t forget them 🙂

خواب۔۔

خواب دیکھنا کوئی بری بات نہیں۔۔ نہ ہی خواب دیکھنے پہ کوئی پابندی ہوتی ہے۔۔ ایسے ہی میں نے بھی ایک خواب دیکھا ہے۔۔ جو آج میں آپ لوگوں کے ساتھ شیرکرنا چاہتی ہوں۔۔

پاکستان میں بہت سے تھیلیسیمیا سینٹرز ہیں۔۔ ماشااللہ سب ہی اچھا کام کررہے ہیں۔۔ میرا خواب ایک آئرن چلیشن سینٹر بنانے کا ہے۔۔ ہمارے ملک کے تھیلیسیمیا سینٹرز اپنی برداشت سے زیادہ بچوں کو رجسٹر کرکے انہیں علاج مہیا کرنے میں مصروفِ عمل ہیں۔۔ ہمارے سینٹرز افسوس کے ساتھ بچوں کو مکمل فولاد کم کرنے والی ادوایات مہیا نہیں کر پارہے۔۔ اور سب ہی جانتے ہیں جہاں خون چڑھانا ضروری ہے وہیں جسم میں جمع ہونے والے فولاد کو نکالنا بھی ضروری ہے۔

میرا خواب ہے ایک سینٹر بنا سکوں جہاں بچے آ کے اپنی ڈوز کے حساب سے فولاد کم کرنے والے انجکشن اور ادوایات لے سکیں، وہیں بیٹھ کے انجکشن لگواسکیں ڈاکٹر اور عملے کی نگرانی میں۔۔

کچھ دینی اور دنیاوی تعلیم کا بھی انتظام ہو، کچھ ہنر سیکھانے کا انتظام بھی ہو،کیوںکہ انجکشن لگانے کے لئے بارہ سے زائد گھنٹے لگتے ہیں تو جب تک بچے سینٹر میں ہوں وہ کچھ نا کچھ سیکھ کر با ہنر با اختیار بن کر اس معشرے کے ایک باعزت شہری بن کر اپنے پیروں پر کھڑے ہوسکیں اور اپنے دوسرے فیلوزکا بھی ساتھ دیں سکیں۔۔

میں جانتی ہوں یہ آسان نہیں، میں جانتی ہوں ان سب کے لئے بہت وسائل درکار ہوںگے، پر میں یہ بھی جانتی ہوں کہ میرے رب کے لئے کچھ مشکل نہیں، کب وہ اپنے نیک بندوں کے ذریعے میرا یہ خواب پورا کروادیں۔۔ یا شاید میرے ہاتھوں نہ صحیح یہ خواب پڑھ کر کوئی اور اس پر عمل کرلیں۔۔

سردی۔۔


سردیوں کے شروع ہوتے ہی آپکے اور ہمارے گرم کپڑے الماریوں سے باہر آجاتے ہیں۔ جس میں سوئیٹر شال طرح طرح کے جیکٹ، ہوڈیز اور مفلر جو کہ پرانے ہوچکے ہوں تو نئے خریدنے کے لئے چل پرٹے ہیں۔ الحمداللہ کتنا بڑا احسان ہے مالک کا کہ ان سب چیزوں کی فکر نہیں۔

لیکن وہیں ہم ان غریب لوگوں اور بچوں کا سوچیں جن کے پاس ذریعہ معاش ہی نہیں کہ کھانے کو روٹی صحیح سے میسر نہیں وہ یہ سب عیاشیاں کہاں سے کریں گے؟ بلکل ان کے لئے یہ سب عیاشیوں کے زمرے میں آتی ہیں۔ خاص کر ہمارا فوکس تھیلیسیمیا کے بچے ہوتے ہیں جو کہ زیادہ تر اندرون سںدھ سے تعلق رکھتے ہیں اور آپ سب کو یہ اچھے سے اندازہ ہوگا کہ اندرون سندھ کتنی ٹھنڈ ہوتی ہے۔

اسی طرح کی کاوش ہم نے پچھلے سال بھی کی تھی، شالیں، ہوڈیز اور ڈسفرال انجکشن ہم نے فاطمید فاوئنڈیشن سندھ کے چاروں سنٹرز میں تقسیم کئے تھے۔ اس سال بھی انشااللہ اسی طرح کی کوشش کرنے کا سوچا ہے، آگے اللہ ہماری مدد کریں۔

چار سو روپے کی ایک ہوڈی / شال اور ڈسفرال انجکشن ایک ۱۸۰ روپے کا ہے

آپ اللہ کے دئے ہوئے خزانے میں سے چند روپے ان بچوں کے لئے بھی ضرور دیں۔ اللہ اس کا اجر دے گا۔