All posts by Ayesha

An Interactive Session For Thalassemia Patients & Parents

We are pleased to inform you that “An Interactive Session For Thalassemia Patients & Parents” is scheduled to be held on Sunday, July 22, 2018 from 10:30 AM to 1:00 PM at MPF Secretariat, Exclusive Trade Centre, 26-C, 4th Floor, Rahat Commercial Lane-3, Opp. SKBZ College, DHA Phase VI, Karachi.

The session will be conducted by:
Dr. Usman Sheikh, Haematologist of Aga Khan University Hospital, Karachi.

Please also find the attached flyer for further details of the program.

There is no registration fee.

For FREE registration, kindly contact at
MPF Secretariat
Phone Number 021-35846450 or send an email at
mpforum@yahoo.com with name(s)and contact numbers of person(s) who wish to attend. Seats are limited to first 60 participants.

Thanks & best regards

#thalassemia #thalassaemia #pakistan

FAiTh – Fight Against Thalassemia registered..

الحمداللہ آج ٹرسٹ رجسٹر ہوگیا۔ 15 سال کی محنت آج ایک ٹرسٹ کی صورت میں ہم سب کے سامنے ہے الحمداللہ۔ یہ صرف ہمارے اکیلے کی محنت یا جیت نہیں ہے۔ یہ سب پاکستانی فیلوز، ان کے والدین، فیمیلیز، ڈونرز، خیرخواہ دوستوں سب کی محنت اور جیت ہے۔

ہمارا ہمیشہ سے مقصد پاکستان بھر کے فیلوز اور ان کی فیمیلیز کی رہنمائی، بہترین علاج، ان کے حقوق کے لئے آواز اٹھانا اور ان کی بقاء کے لئے جہد و جہد کرنا تھااور اگے بھی رہے گا۔ یہ ٹرسٹ پاکستان بھر میں موجود تھیلیسیمیا فیلوز اور ان کی فیمیلز کا تھا اور رہے گا انشااللہ۔

جن فیلوز اور ان کے والدین نے پیشنٹ اور پیڑینٹس سوسائٹی کے فارم بھرے تھے وہ پلیز مجھ سے رابطہ کرلیں تاکہ ہم فیسبک گروپ اور واٹس اپ گروپ تشکیل دے سکیں۔

ہم سب کو ٹرسٹ کی رجسٹریشن مبارک ہو۔ اللہ ہم سب کو تھیلیسیمیا کی موجودہ صورتحال کو بہتر بنانے کی ہمت دے آمین۔

جزاک اللہ خیر

ضروری معلومات۔۔

کیا آپ کو معلوم ہے جو خون آپ کو دیا گیا ہے وہ پیک آربی سی تھے یا ہول بلڈ؟ کیا آپ کو معلوم ہے ہمیں کونسے کمپوننٹ کی ضرورت ہے اور ہمیں کیا مل رہا ہے؟

اگر نہیں تو یہ غلط ہے۔۔ ہمیں ہر بات کا علم ہونا چاہیئے۔ خاص کر جب بات صحت کی ہو۔

مریض اور اس کے والدین کو بیماری سے متعلق ہر چیز کا علم ہونا چاہیئے۔

جب ایک ڈونر خون کا عطیہ دیتا ہے تو وہ ہول بلڈ کہلاتا ہے۔ اس خون سے تین زندگیاں بچانے کے لئے سرخ خونی خلیات, سفید خونی خلیات ، پلازما اور پلیٹلیٹ علحیدہ کرلیئے جاتے ہیں۔

اور تھیلیسیمیا کے مریض کو صرف سرخ خونی خلیات کی ضرورت ہوتی ہے، کافی جگہیوں پہ مشین نہ ہونے کی وجہ سے ہول بلڈ لگایا جاتا ہے جو کہ ان کے لئے نقصان دہ ہے۔

پوسٹ میں موجود تصویریں آپ کی مدد کے لئے دی گئی ہیں، کسی سوال کی صورت میں آپ کمینٹ کریں انشااللہ ہم آپ کی رہنمائی کریں گے۔

پوری دنیا کے تھیلیسیمیا میجر اور پاکستان کے تھیلیسیمیا میجر

پوری دنیا کے تھیلیسیمیا میجر اپنی اپنی زندگی کو بہترین بنانے میں مصروف عمل نظر آتے ہیں۔ کوئی پڑھائی کر رہا ہے، کوئی نوکری، کوئی بزنس، سب اپنی اس بیماری کو طاقت بنائے ہوئے ہیں۔ سب ہی اس بیماری میں کیا صحیح ہے، کیا ہونا چاہیئے، خود کو کیسے فٹ رکھیں اس موضوع پہ بات کرتے بحث کرتے نظر آتے ہیں۔

دوسری طرف ہمارے زیادہ تر پاکستانی فیلوز ؟ بہت معذرت کے ساتھ۔۔

فیسبک پہ عشق محبت کی باتیں، فضول پوسٹس شیئر، ہمارے کتنے دوست پڑھائی چھوڑ چکے, کچھ نہیں کرتے سارا سارا دن، بیماری کو کمزوری بنا کے گھر بیٹھ گئے ہیں۔۔ نا اپنی صحت کو بہتر بنانے کی کوشش کرتے ہیں نا اپنی زندگی کو۔۔ جو جیسا چل رہا ہے بس چلاتے رہو

کیا یہ صحیح ہے؟ کب تک چلے گا ایسے؟