Tag Archives: iron

کیسے۔۔؟

اگر ہمارے سر پر چھت ہے، پیٹ بھرنے کو تین ٹائم کا کھانا ہے، ضرورتِ زندگی کا سب سامان ہے تو یقینا ً ہم لاکھوں لوگوں سے خوش نصیب ہیں۔۔

تھیلیسیمیا ایک بہت مہنگی اور مہلک بیماری ہے۔۔ آزمایشوں کا سفر صرف تھیلیسیمیا میجر ہونے پر ختم نہیں ہوتا۔۔ اگر آپ غریب گھرانے میں پیدا ہوئے ہیں، پڑھے لکھے نہیں ہیں تو زندگی مسلسل ایک جنگ ہے۔۔

تھیلیسیمیا میں بہت سے مسئلے درپیش ہوتے ہیں، کبھی ہڈیوں کا درد، کبھی مہنگے ٹیسٹ، کبھی مہنگی ادوایات۔۔ اگر آپ کسی گاوُں سے ہیں تو علاج کے ساتھ ساتھ شہر میں رہنے، کھانے پینے کا خرچہ۔۔ آزمائش اور مزید آزمائش۔۔

کچھ دن سے ہماری ٹیم ہمارے ایک تھیلیسیمیا فیلو کے ساتھ مصروف ہے، جس کو فریکچر ہوگیا ہے، آسٹیو پراسس ۔ ہڈیوں کا بھر بھرا پن بھی۔۔ وہ فیلو دادو سندھ کا رہائیشی ہے، والدہ اور بھائی ہیں فیملی میں۔۔ بھائی چنگچی چلاتا ہے گھر کے گزر بسر کے لئے۔۔

بہت تکلیف پہ جب ایک ڈاکٹر کے کہنے پے اس نے ایک ہڈیوں کے ڈاکٹر کو دکھایا تو انھوں نے ایک مہنگا ٹیسٹ اور آٹھ ہزار کا پلاسٹر لکھ دیا۔ ٹیسٹ بھی کروالیا، رپورٹ بھی آگئی، گیارہ ہزار کا انجکشن بھی لکھ دیا۔۔ اب پلاسٹر لگوا کے دو مہینے کہاں رہوگے، کیسے آنا جانا کرو گے دادو سے خون لگوانے ہر پندرہ دن بعد؟ مطلب آزمائش پہ آزمائش۔۔

ایسے بہت سے کیس ہمیں ہر تھیلیسیمیا سینٹر میں ملتے ہیں، جن کے پاس تھیلیسیمیا میں ہونے والے اضافی مسئلوں کو حل کرنے کی استطاعت نہیں ہوتی، نہ اچھے ڈاکٹر کو دکھا سکتے ہیں، نہ مہنگے ٹیسٹ کرواسکتے ہیں۔۔ نہ مہنگی دوائی لے سکتے ہیں۔۔ زندگی کو روز اپنے ہاتھوں سے پھسلتے دیکھنے کے علاوہ کچھ نہیں ہوتا ان کے پاس۔۔

میرا دماغ دو دن سے بہت ماوف ہوگیا ہے۔۔ دل ایسے فیلوز کے لئے بہت کچھ کرنے کا چاہتا ہے۔۔ ہر فیلو جس کو ضرورت ہے ڈاکٹر کی، دوائی کی۔۔ ٹیسٹ کی۔۔ ان کی ہیلپ کرنے کا دل چاہتا ہے۔۔ پر کیسے۔۔ بہت مشکل ہے یہ کام۔۔

زندگی۔۔

صحت ایک نعمت ہے۔۔ اور اس کی قدر تب زیادہ ہوتی ہے جب آپ بیمار ہوں یا جب آپ کے ہاتھ میں ایک لمبی دوائی کی پرچی یا ٹیسٹ کا پرچہ آتا ہے، تب سچ میں صحت کی قدر ہوتی ہے۔

تھیلیسیمیا میجر کی زندگی روز انجکشن لگانے یا دوائی کھانے یا پھر ہر پندرہ دن بعد خون لگوانے میں گزر جاتی ہے۔۔ اس پر اگر خون نہ ملے تو ڈونر ڈھونڈنے میں کچھ گھنٹے اور کبھی دنوں لگ جاتے ہیں۔

آپ لوگ ضرور سوچتے ہونگے کہ آخر مسئلہ کیا ہے؟عائشہ ہمیں بار بار کیوں تھیلیسیمیا کا بتاتی رہتی ہے، اس میں کیا ہوتا ہے، ٹیسٹ کرالینا چاہئیے، وغیرہ وغیرہ ۔۔

آپ لوگ بھی پڑھ کر سوچتے ہونگے، ہاں ٹھیک ہے پڑھ لیا، اب ٹیسٹ کرائیں نہ کرائیں ہماری مرضی۔۔

بلکل یہ آپ کی مرضی ہے۔۔ پر ہمارا بتانا بھی فرض ہے۔۔ زندگی اتنی آسان نہیں جتنی نظر آتی ہے۔۔ کیا معلوم میرے ان مسائل کو بتانے سے آپ اپنی کرسی سے اٹھ کر ٹیسٹ کروائیں اور اپنی آنے والی نسل کو اس بیماری سے بچا لیں؟

تھیلیسیمیا میں مستقل خون لگنے سے ہمارے لئے اور بہت سے مسائل پیدا ہوتے ہیں، جسم میں فولاد کا بڑھنا، ہیپاٹائیٹس، ایڈز، جگر کی خرابی، دل کی کمزوری اور بہت سے مسئلے ہوتے ہیں۔۔

یقین جانے جب خون کا نمونے لیب میں دے کر گھر آتے ہیں تو ذہن میں سو سوال ہوتے ہیں، اگر ہیپاٹائیٹس ہوگیا تو؟ اگر کوئی اور مسئلہ ہوگیا تو؟ ویسے ہی خون لگانے اور فولاد کم کرنے سے تنگ ہیں، کچھ اور ہوگیا تو کیا کریں گے؟

Blood Tests
Blood Tests

چلیں میں اور آپ تو مہنگے سے مہنگا ٹیسٹ بھی کرالیں گے، دوائیاں بھی لے لیں گے۔۔ ان کا کیا ہوگا جن کے پاس نہ ٹیسٹ کے وسائل ہیں نہ دوائی کے۔۔ ہیپاٹائیٹس کا ایک ٹیسٹ آغا خان لیب میں سات ہزار کا ہوتا ہے۔۔ اور وہی ٹیسٹ ڈائو لیب میں دو ہزار آٹھ سو کا۔۔ غریب کہاں سے لائے گا اتنے پیسے۔۔ امیر سے امیر بندہ بھی کبھی کبھی پریشان ہوجاتا ہے۔۔

Bill
Bill

اور اگر خدانخواستہ ٹیسٹ پوزیٹیو آجائے تو پھر ایک لمبی لسٹ دوائی کی یا ٹیسٹ کے نہ ختم ہونے والے سلسلے۔۔ اس ڈر اور خوف کے بیچ گزرتی ہے ایک تھیلیسیمیا میجر کی زندگی۔۔ اور اس زندگی سے بچانے کے لئے ہم چیخ چیخ کر آپ سے کہتے ہیں کہ ٹیسٹ کروالیں۔۔ خدارا اپنے بچوں کو اس اذیت سے بچا لیں۔۔